کھانا نہ کھا سکنے والے مریضوں کے لیے جدید آلہ تیار ۔۔۔یہ کیسے کام کرے گا ؟مکمل تفصیلات اس خبر میں

لندن (ویب ڈیسک)بیشک تندرستی ہزار نعمت ہے مگر اللہ تعالیٰ نے آزمائش کے لیے انسانی جسموں کو بیماریوں سے آشنا کرنے کی قدرت بھی رکھی ہے۔یوں طرح طرح کی بیماریوں کا انسان شکار ہوتا اور جسمانی طور پر معذور یا کمزور ہو جاتا ہے۔ان بیماریوں میں ایک بڑی خطرناک بیماری جوکسی سانحے یا بیماری کی

صورت میں لاحق ہوتی ہے وہ کھانا نگلنے کی سکت ہے جو ختم ہو جاتی ہے۔تاہم اب ڈاکٹرز اور ماہرین صحت نے مل کر جدید ڈیوائس تیار کی ہے جو ایسے مریضوں کے لیے کارآمد ثابت ہو گی جو کہ اپنا کھانا خود سے نہیں نگل سکتے۔ چوٹ، فالج یا کسی سانحہ کے بعد مریضوں کو لقمہ نگلنے میں مشکل پیش آتی ہے۔اب ماہرین نے اس کا موثر حل نکالا ہے۔اس عمل میں حلق کے اندر بجلی کے ہلکے جھماکے ڈالے جاتے ہیں جس کے بعد مریض کھانا نگلنے میں بہتری محسوس کرتا ہے۔یہ آلہ بہت موثر ہے جسے برطانوی کمپنی ‘فی جینیسِس’ نے تیار کیا ہے۔آلے کو فیجینِکس کا نام دیا گیا ہے جو نگلنے کے دائمی اور شدید مرض میں آرام کی وجہ بنتا ہے۔ اس میں ایک تار ناک کے ذریعے حلق کے اندر ڈالا جاتا ہے۔ ٹچ سکرین سے اسے قابو کیا جاتا ہے اور تار میں ہلکی بجلی پیدا ہوتی ہے جس سے حلق کے اندرونی پٹھے متحرک ہوتے ہیں۔ٹچ سکرین پر وقت سیٹ کر کے اگر روزانہ 10 منٹ تک بجلی دی جائے تو جلد ہی مریض کھانے پینے میں آرام وآسانی محسوس کرنے لگتا ہے۔ابھی تک اس آلے کو کمرشل بنیادوں پر فروخت کرنے کے لیے مارکیٹ میں نہیں لایا گیا تاہم محققین کہنا ہے کہ جلد ہی یہ ڈیوائس مارکیٹ میں دستیاب ہو گی۔ڈیوائس کی تیاری میں کافی عرصہ لگا ہے ا ور ابھی بھی یہ تیاری کے مراحل میں ہے اور بہت جلد خوشخبری سنائی دے گی۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *