خواجہ سرا وکیل نشا راؤ نے کن افراد کا کیس مفت لڑنے کا اعلان کر دیا؟ جان کر آپ انکے عزم کی داد دیں گے

لاہور(ویب ڈیسک)پاکستان کی پہلی خواجہ سرا وکیل نشا رائو نے بد فعلی کا نشانہ بننے والے افراد کا کیس مفت لڑنے کا اعلان کردیا۔تفصیلات کے مطابق نشا رائو نے کہاکہ وہ تمام ایسی خواتین کے کیس مفت لڑنا چاہیں گی جو بدفعلی کاشکار ہوئیں ہیں ۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ ہمیشہ خواتین کے

حق میں آواز اٹھائی ہے اور مستقبل میں بھی متاثرہ خواتین کے لئے کچھ اچھا کرنیکا ارادہ رکھتی ہوں۔یاد رہے کہ پاکستان کی پہلی خواجہ سرا وکیل نشا راؤ جنہوں نے سڑکوں پر بھیک مانگ کر اپنی وکالت کی تعلیم مکمل کی، اب تک وہ 50سے زائد مقدمات کی پیروی کرچکی ہیں۔نشا راؤ نے اپنی کہانی سُناتے ہوئے کہا کہ میں دن میں کلفٹن کی سڑکوں پر بھیک مانگتی تھی اور رات میں وکالت کی تعلیم حاصل کرنے کیلئے کلاسز لینے جایا کرتی تھیں۔ میں دس سال کراچی کی سڑکوں اور سگنلز پر بھیک مانگنے کے بعد آج اس مقام پر پہنچی ہوں۔دوسری جانب بنگلادیش میں خواجہ سراؤں کو دینی تعلیم سے روشناس کرانے کے لیے پہلا مدرسہ قائم کردیا گیا ہے۔ عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق بنگلادیش کے دارالحکومت ڈھاکا میں پہلی بار تیسری جنس کے لیے ’اسلامک تھرڈ جینڈر اسکول‘ کے نام سے ایک مدرسہ کھولا گیا ہے جہاں لازمی اسلامی تعلیم کے علاوہ انگریزی، ٹیکنالوجی، سائنس، ریاضی، اور معاشرتی علوم کی تعلیم بھی دی جائے گی تاکہ وہ باعزت روزگار بھی حاصل کرسکیں تاہم ابتدائی طور پر 150 بالغ خواجہ سراؤں کو داخلہ دیا جائے گا۔بنگلادیش میں خواجہ سراؤں کے لیے کام کرنے والی این جی اوز کے اعداد و شمار کے مطابق ملک بھر میں خواجہ سراؤں کی آبادی 15 لاکھ کے لگ بھگ ہے تاہم حکومت کا اصرار ہے کہ ایسے شہریوں کی تعداد صرف 50 ہزار ہے جن کی تعلیم و تربیت اور ہنر سکھانے کے لیے اقدامات کیے جارہے ہیں تاکہ معاشرے کا یہ طبقہ بھی سماج کے لیے کارآمد ثابت ہو۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *