جلسوں میں کارکنوں کی تواضع ’’باجوہ پیزے‘‘ سے کرنے کا فیصلہ،

کراچی (ویب ڈیسک) پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ آئندہ جلسوں میں بریانی یا قیمے والے نان نہیں، بلکہ عاصم سلیم باجوہ کے پیزا سے تواضع کی جائے گی۔ مفت کھانا، وہ بھی عوام کے پیسے ہیں۔ کراچی میں پاکستان پیپلز پارٹی کے زیراہتمام پی ڈی ایم کے

عوامی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کراچی والوں دیکھا کہ کل ایک شخص کل چیخ چیخ رہا تھا، لوگوں کو کہتا گھبرانا نہیں، لیکن خود ایک ہی جلسے سے گھبرا گیا ہے، ہم جانتے ہیں آپ دباؤ اور پریشر میں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تقریر کے ایک ایک لفظ، آپ حرکات اور سکنات سے آپ کا خوف جھلک رہا تھا، یہی خوف عوام دیکھنا چاہتی ہے، یہ عوام کی طاقت کا خوف ہے۔ مریم نواز کا کہنا تھا کہ اگر آپ کو کوئی سکھانے والا نہیں تو نوازشریف سے ہی سیکھ لیتے، تم نے 126 دن دھرنا دیا، لیکن نوازشریف نے تو ایک دن بھی گھبرا کر تمہارا نام نہیں لیا، ایک دن بھی نہیں گھبرایا۔ اب بھی نوازشریف تمہارا نام نہیں لے گا، کیونکہ بڑوں کی لڑائی میں بچوں کا کوئی کام نہیں، تم تو ایک ملازم ہو، اب وزیراعظم کی سیٹ پر ملازم ہو۔ جس کی سلیکشن کی عوام کو لاکھوں کی تنخواہ دینا پڑتی ہے۔ تم کبھی عوام سے مخاطب نہیں ہوتے بلکہ نوازشریف اور ان لانے والوں کو ہی مخاطب ہوتے ہو۔ انہوں نے کہا کہ میں عمران خان کا نام لینا پسند نہیں کرتی۔ مجھے کہا یہ بچی ہے لیکن نانی ہے، میں اللہ کا شکر ادا کرتی ہوں ، میں ایک بچے کی نہیں دو بچوں کی نانی ہوں۔ یہاں جلسے میں بیٹھی بہت ساری خواتین نانیاں اور دادیاں ہیں۔ میں تھکی ہوتی ہوں تودونوں نواسے میرے پاس آتے ہیں تو تھکاوٹ ختم ہوجاتی ہے۔ میں آپ کو اس طرح کی باتوں پر نشانہ نہیں بناؤں گی، کیونکہ میں نوازشریف اور کلثوم نواز کی بیٹی ہوں۔ آج بھی میں کمرے میں داخل ہوتی ہوں تو میرے والد کرسی سے کھڑے ہوجاتے ہیں۔ میں نے گھر میں یہ ماحول دیکھا ہے۔ یہ رشتے ان کو نصیب ہوتے جو رشتوں کا احترام جانتے ہیں۔مریم نواز نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان بیٹیوں کی طرح سر پر ہاتھ پھیرتے ہیں۔ آصف زرداری بیٹی کہہ کر مخاطب کرتے ہیں۔ بلاول بھٹو مجھے بڑی بہن سمجھتا ہے۔ جب وقت آئے گا تو ہم ایک دوسرے کے حریف بھی ہوں گے۔ ہم ایک دوسرے کی تضحیک نہیں کریں گے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.